کرپٹو کرنسی میں لگایا ہوا پاکستانیوں کا سرمایہ نصف سے ذائد ڈوب گیا، بِٹ کوئن 65ہزار ڈالر سے کم ہو کر 37,500تک پہنچ گیا، مارکیٹ کریش ہو گئی

کرپٹو کرنسی میں لگایا ہوا پاکستانیوں کا سرمایہ نصف سے ذائد ڈوب گیا، بِٹ کوئن 65ہزار ڈالر سے کم ہو کر 37,500تک پہنچ گیا، مارکیٹ کریش ہو گئی

منگل 22فروری 2022
کراچی، فریئر روڈ ( 123karachi.com)
تحریر : توصیف حنیف
کرپٹو کرنسی موجودہ سال کے بد ترین بحران کا شکار ہو گئی ۔بِٹ کوئن کی قیمت 37،500ڈالرز تک پہنچ گئی جو کہ کچھ عرصہ پہلے 65،000کے لگ بھگ تھی ۔پاکستان میں اگرچہ کرپٹو کرنسی کے حوالے سے تا حال قانون سازی نہیں ہو سکی ہے مگر، کراچی چمبر آف کامرس کے سینئر عہدے دار کے مطابق پاکستانیوں نے کرپٹو کرنسی میں تقریباً 20ارب سے ذائد کی سرمایہ کاری کر رکھی ہے ۔بِٹ کوئن کی قیمت نصف ہونے کے باعث کرپٹو کرنسی کے ہزاروں دیگر کوئنزکی قیمتیں بھی انتہائی حد تک گر چکی ہیںجن لوگوں نے پاکستانی 18ہزار روپے کرپٹو میں لگائے تھے ۔ان کے سر مائے کی قدر 10ہزار روپے سے بھی کم ہو گئی ۔ جس کے باعث کرپٹو میں سرمایہ کاری کرنے والے پاکستانی خاصہ نقصان اٹھا چکے ہیں ۔ ماہرین کے مطابق بِٹ کوئن جیسے ہی 43،000کی قیمت تک آئے گا مارکیٹ پھر سنبھل جائے گی ماہرین کے مطابق بِٹ کوئن اور ایتھریم کی قیمتیں ہی کرپٹو کرنسی مارکیٹ کا رخ تبدیل کرتی ہیں۔ ایتھریم جو کہ 4ہزار ڈالر کا تھا نصف ہو کر تقریباً2500ڈالر کا ہو گیا ہے۔ واضح رہے کہ بیشتر پاکستانیوں نے بینکوں سے اپنی بچت نکلوا کر کرپٹو مارکیٹ میں انویسٹ کر رکھی ہے۔ یہ ہی وجہ ہے کہ بینکنگ انڈسٹری کرپٹو مارکیٹ کی سخت مخالف ہے۔ چند دن پہلے تک مارکیٹ کپیٹل2ٹریلیئن ڈالرز تھا جو کہ کم ہو کر 21فروری تک 1.65بلیئن ڈالرز تک آگیا ہے ، کرپٹو کی مزید معلومات اور خبروں کے لیئے 123karachi.com متواتر ملاحظہ کریں ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں