کراچی کے ہزاروں رہائشی پلاٹوں کی منظوری کا عمل تعطل کا شکار،ایس بی سی اے ون ونڈو نے نقشوں کی منظوری سب لیزکیئے جانے سے مشروط کردی

کراچی کے ہزاروں رہائشی پلاٹوں کی منظوری کا عمل تعطل کا شکار،ایس بی سی اے ون ونڈو نے نقشوں کی منظوری سب لیزکیئے جانے سے مشروط کردی

پیر 14 فروری 2022
کراچی ،فریئر روڈ(123karachi.com )
کراچی میں رہائشی پلاٹوں پر اپنے گھر تعمیر کرنے والے شہریوں کے مکانات کے نقشوں کی منظوری کا عمل سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے تعطل کا شکار کر دیا ۔تفصیلات کے مطابق کراچی کی سینکڑوں رہائشی کالونیاں اور علاقوں میں 120گز کے ہزاروں پلاٹوں کے نقشے ایس بی سی اے نے منظور کرنے سے انکار کر دیا ، جس کے باعث شہری اپنے چھوٹے رہائشی پلاٹوں پر گھروں کی تعمیرات سے محروم کیئے جا رہے ہیں ۔ اس ضمن میں ڈسٹرکٹ ویسٹ کے علاقے گلشن شیراز کے مکینوں نے بتایا کہ انکے علاقے کے سینکڑوں رہائشی پلاٹوں پر وہ اپنے گھر بنانے سے محروم ہیں، کیونکہ انکے گھروں کے نقشے منظور نہیں کیئے جا رہے ۔بتایا جاتا ہے کہ گلشن شیراز کی ہاﺅسنگ سوسایٹی کا KDAسے تصفیہ طلب معاملہ زیر التوا ہے ، جس کے باعث SBCAانکے نقشے منظور نہیں کر رہی ہے۔علاقے کے رہائشیوں نے ڈی جی ایس بی سی اے اورمتعلقہ محکموں سے اپیل کی ہے کہ انکے گھروں کے نقشے جلد از جلد منظور کروائے جائیں تا کہ وہ اپنے گھروں کی تعمیرات کر سکیں ۔واضح رہے کہ کراچی کے مختلف علاقوں کے ہزاروں افراد اپنے گھروں کی تعمیرات سے محروم کر دیئے گئے ہیں۔ کیونکہ متعلقہ ہاﺅسنگ سوسائیٹی اور ایس بی سی اے کے درمیان تنازعات موجود ہیں ۔ گلشن شیراز کے مکینوں نے بتایا کہ ایس بی سی اے ون ونڈو کے حکام کا کہنا ہے کہ انھیں ڈی جی نے صرف سب لیز ہوئے پلاٹوں کے نقشوں کی منظوری کی ہدایت کی ہے۔ یاد رہے کہ ٹرانسفر اور میوٹیشن ڈیڈ کی بنیاد پر خریدے گئے پلاٹوں کے نقشوں کی منظوری کئی سالوں سے دی جاتی رہی ہے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں