DIGٹریفک اقبال دارا نے دوران سفر کراچی کے شہریوں پر پانی پینے پر پابندی عائد کردی

DIGٹریفک اقبال دارا نے دوران سفر کراچی کے شہریوں پر پانی پینے پر پابندی عائد کردی

ہفتہ 13مارچ 2021
دورانیہ مطالعہ :02منٹ
کراچی ،فریئر روڈ
کراچی ٹریفک پولیس کے DIGاقبال دارا انتظامی طور پر نا اہل افسر ثابت ہو گئے ہیں۔ میڈیا میں ٹریفک افسران اور اہلکاروں کی رشوت خوری ، دوران ڈیوٹی کرسیوں پر بیٹھ کر آرام فرمانا، مرکزی سگنلز پر کسی بھی افسران و اہلکاروں کا موجود نہ ہونا اور بسوں ، منی بسوں ، کوچوں کو ٹوکن کے عوض قوانین کی کھلی خلاف ورزی کی اجازت دینے کی مسلسل نشاندہی کے باوجود DIGٹریفک نے کراچی کی سڑکوں پر آکر کبھی اپنے اہلکاروں کو سنجیدگی سے مانیٹر نہیں کیا۔ نا اہل اور جعلی اسناد کے حامل کئی SOکراچی میں اندرون سندھ اور دیگر علاقوں سے درآمد کر کے تعینات کر دیئے گئے۔ٹریفک اہلکار شہریوں کو مسلسل تنگ کرتے نظر آتے ہیں۔ اگر کوئی شہری رکشے میں سوار ہو کر جا رہا ہو اور اس کو کسی دوکان سے کوئی انتہائی ضروری سامان لینا ہو تو ٹریفک اہلکار انتہائی سائیڈ پرچند سیکنڈ کے لیئے کھڑے رکشے پر بھی اعتراض داغ دیتے ہیں۔گویاکہ شہری دوران سفر سڑک کے کنارے رکشہ رکوا کر کوئی انتہائی ضروری چیز بھی نہیں خرید سکتا۔
واضح رہے کہ دوسری جانب سڑکوں اور فٹ پاتھوں پر ٹریفک اہلکاروں کی ملی بھگت سے ہزاروں گاڑیاں، موٹر سائیکلیں، رکشے ،چنگچی ، پکنک اینڈ پارٹی کی گاڑیاں نان پارکنگ ایریا میں کھڑی نظر آتی ہیں۔ہفتہ 13مارچ 2021 کو گارڈن مزار سگنل پر ایک شہری دوران سفر شدید پیاس لگنے پر پانی وغیرہ لینے کے لیئے سڑک کے بلکل کنارے رکشے میں رکے جس کی وجہ سے ٹریفک کی روانی پر بھی بلکل اثر نہیں پڑ رہا تھا، مگرSOعمران کے ماتحت کام کرنے والے ٹریفک اہلکار نے رکشے میں سوار مسافر کو منع کیا کہ وہ پانی نہیں لے سکتا ۔ شہریوں نے مطالبہ کیا ہے کہ کراچی کے DIGٹریفک کو ہٹا کر موٹر وے پولیس کے کسی اہل افسر کو اس پوسٹ پر تعینات کیا جائے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں