ٹریفک کانسٹبل حنیف رکشہ ڈریﺅر کے منہ پر ہاتھ مارتے ہوئے

البیلہ چوک گارڈن پر تعینات ٹریفک اہلکاروں کی میڈیا ٹیم کو ہراساں کرنے کی کوشش،ٹریفک اہلکاروں کی جانب سے رکشہ ڈرائیور کو ذدوکوب کرنے کی فوٹیج بنانے پر مسلح ٹریفک اہلکاروں کی میڈیا ٹیم کوصحافتی فرائض سے روکنے کی مذموم حرکت

123karachi.com
02مارچ2021
دورانیہ مطالعہ :02منٹ
کراچی، فریئر روڈ
اندرون سندھ سے کراچی میں درآمد شدہ سینکڑوں ٹریفک اہلکاروں نے کراچی کے شہریوں کو اپنی بھیڑ بکریاں سمجھ لیا۔ روزانہ شہریوں کے ساتھ بدتمیزیاں اور انکی گاڑیوں پر حملے کرنا ،مکّے برسانا ان سپاہیوں کا وطیرا بن گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق 02مارچ 2021 کی صبح 10:30بجے البیلا چوک پر تعینات 4ٹریفک پولیس کے سپاہیوں نے بلا جواز رکشے والے پر حملہ کر دیا اور اسے تشدد کا نشانہ بنایا۔اس واقع کی وڈیو اور تصاویر رکشے میں سوار میڈیا ٹیم نے بنائی تو 4مسلح ٹریفک سپاہیوں نے میڈیا ٹیم سے بھی بد تمیزی کی اور کہا کہ وڈیو کیوں بنا رہے ہیں، اسلحے کے زور پر وڈیو بنانے سے روکنے کی کوشش کی۔مذکورہ رکشہ ڈرائیور کا نام ندیم اقبال ہے اور رکشے کا نمبر D11-07258ہے جس کو ٹریفک پولیس اہلکاروں نے زدوکوب کیا ۔ واضح رہے کہ موقع پر موجود ٹریفک ASIطارق نے بھی اپنے ما تحت سپاہیوں کو میڈیا ٹیم سے بد تمیزی کرنے پر ان کی سرزنش نہیں کی اور انہی کا ساتھ دیتا رہا۔یاد رہے کہ رکشہ والے پر حملہ آور ہونے والے اور میڈیا سے بدتمیزی میں پیش پیش رہنے والے کانسٹبل کا نام حنیف ہے۔ جبکہ باقی 3 سپاہی بھی میڈیا ٹیم کو ہراساں کرتے رہے۔
واضح رہے کہ میڈیا ٹیم کے ساتھ خاتون نیوز کوآرڈینیٹربھی موجود تھیں جن کو ٹریفک کے سپاہی نے اسلحے کے زور پر وڈیو بنانے سے روک دیا۔واقع کی تفصیلات DIGٹریفک اقبال دارا اور دیگر متعلقہ حکام کو بتا دی گئی ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں