لیاقت آباد ٹاؤن میں''اویس و اورنگزیب سسٹم "نے ڈائریکٹر سامت علی خان کو بے اثر کر دیا ،سینکڑوں غیر قانونی عمارتوں کی تعمیرات زور و شور سے جاری

لیاقت آباد ٹاؤن میں”اویس و اورنگزیب سسٹم “نے ڈائریکٹر سامت علی خان کو بے اثر کر دیا ،سینکڑوں غیر قانونی عمارتوں کی تعمیرات زور و شور سے جاری

123karachi.com
09دسمبر2020
کراچی ، فریئر روڈ
لیاقت آباد میں ایمانداری کی شہرت رکھنے والے ڈائریکٹر سامت علی خان کی تقرری کے باوجود اویس اور اورنگزیب کرپشن سسٹم جاری و ساری ہے۔

ڈی جی شمس الدین سومرو بھی انکے آگے بے بس ہیں۔ لیاقت آباد میں بلڈر عبید نے پلاٹ 11/6پر 8فٹ سڑک پر قبضہ کر کے نصف درجن دوکانیں بنالی ۔مذکورہ دوکانوں پر ڈمی انہدامی کاروائی کی گئی اور پھر بلڈر نے دوبارہ اگلے چند دنوں میں دوکانیں دوبارہ مکمل کرلیں۔

لیاقت آباد ٹاؤن میں''اویس و اورنگزیب سسٹم "نے ڈائریکٹر سامت علی خان کو بے اثر کر دیا ،سینکڑوں غیر قانونی عمارتوں کی تعمیرات زور و شور سے جاری
لیاقت آباد ٹاؤن میں”اویس و اورنگزیب سسٹم “نے ڈائریکٹر سامت علی خان کو بے اثر کر دیا ،سینکڑوں غیر قانونی عمارتوں کی تعمیرات زور و شور سے جاری

اسی طرح 7/25پر جعلی انہدامی کاروائی کی گئی اور پھر بلڈر فیضان تھّلے والے نے چوتھی چھت بھی ڈال دی۔
بلڈر یعقوب انصاری نے بھی گذشتہ کچھ مہینوں قبل منہدم ہوئے 10/683پر دوبارہ تعمیرات کرلی ہیں۔ اسی طرح پلاٹ نمبر 6/494پر BIاورنگزیب علی خان اپنی شراکت داری میں 7منزلہ غیر قانونی تعمیرات کروا رہا ہے۔6/417پر بھی بلڈر کم اسٹیٹ بروکر توفیق نے 7منزلہ غیر قانونی عمارت تعمیر کرلی۔

لیاقت آباد ٹاؤن میں''اویس و اورنگزیب سسٹم "نے ڈائریکٹر سامت علی خان کو بے اثر کر دیا ،سینکڑوں غیر قانونی عمارتوں کی تعمیرات زور و شور سے جاری
لیاقت آباد ٹاؤن میں”اویس و اورنگزیب سسٹم “نے ڈائریکٹر سامت علی خان کو بے اثر کر دیا ،سینکڑوں غیر قانونی عمارتوں کی تعمیرات زور و شور سے جاری

لیاقت آباد ٹاؤن میں''اویس و اورنگزیب سسٹم "نے ڈائریکٹر سامت علی خان کو بے اثر کر دیا ،سینکڑوں غیر قانونی عمارتوں کی تعمیرات زور و شور سے جاری
لیاقت آباد ٹاؤن میں”اویس و اورنگزیب سسٹم “نے ڈائریکٹر سامت علی خان کو بے اثر کر دیا ،سینکڑوں غیر قانونی عمارتوں کی تعمیرات زور و شور سے جاری

جبکہ 5/1020پر بھی چوتھا غیر قانونی فلور حالیہ دنوں میں مکمل کر لیا گیا ہے۔مذکورہ پلاٹ پر7منزلہ غیر قانونی عمارت چند ہفتوں میں مکمل کرلی جائیگی۔
ان تمام غیر قانونی عمارتوں کی تعمیرات میں اویس اور اورنگزیب سسٹم فعال ہے۔جبکہ مذکورہ تعمیرات میں ADنواب مگنیجو اور BIراجھن چانڈیو بھی شراکت دار ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں