ڈائریکٹر لیاقت آباد عبدالرحمن بھٹی لیاقت آباد میں غیر قانونی عمارتوں ے سرپرست بنے رہنے میں مشغول عرفان چڈی، بھائی میاں اور عبید قریشی کو لیاقت آباد کا انفرا اسٹرکچر تباہ کرنے کی کھلی چھوٹ

ڈائریکٹر لیاقت آباد عبدالرحمن بھٹی لیاقت آباد میں غیر قانونی عمارتوں ے سرپرست بنے رہنے میں مشغول عرفان چڈی، بھائی میاں اور عبید قریشی کو لیاقت آباد کا انفرا اسٹرکچر تباہ کرنے کی کھلی چھوٹ

123karachi.com
دورانیہ مطالعہ :02منٹ
منگل 16مارچ2021
کراچی ، فریئر روڈ (سن رائز رپورٹ)
ڈائر یکٹر لیاقت آباد عبدالرحمن بھٹی کی شراکت داری سے لیاقت آباد میں سینکڑوں غیر قانونی پورشنز اور مارکیٹوں پر مشتمل غیر قانونی تعمیرات بلا روک ٹوک جاری ہے۔ بی ایریا میں اسٹیٹ بروکر عبید قریشی نے پلاٹ نمبر 11/6اور پلاٹ نمبر36/9 پر غیر قانونی پورشنز اور دوکانیں تعمیر کر لی ہیں ۔جبکہ شریف آباد کے علاقے میں عرفان چڈی اور اصغر قریشی نے بلترتیب پلاٹ نمبر R-747 اورR-670پر غیر قانونی پورشنز اور دوکانیں تعمیر کر لی ہیں۔دوسری جانب منّا قریشی بھی 9/3پر غیر قانونی پورشنز اور دوکانیں مکمل کرنے میں مصروف ہے۔اور 7/11بلاک 7 پر حالیہ مہینوں میں 8منزلہ تعمیر کی گئی عمارت زمین میں دھسنا شروع ہو گئی ہے ،جبکہ 5/1034پر بلڈر زاہد 7منزلہ عمارت بنانے میں مصروف ہے۔
عبید قریشی موبائل نمبر (03153287515) ، عرفان چڈی موبائل نمبر (03131145659) اور اصغر قریشی عرف بھائی میاں موبائل نمبر (03131101482)سے سن رائز نے رابطہ کر کے ان سے پوچھا کہ کیا انکی غیر قانونی تعمیرات کی SBCAسے کسی قسم کی بھی منظوری لی گئی ہے؟ اس پر مذکورہ تینوں افراد اس سوال کا جواب دینے سے قاصر رہے۔واضح رہے کہ لیاقت آباد میں صرف 2منزلہ رہائشی عمارت کی تعمیرات قانونی طور پر کی جا سکتی ہے، مگر تقریباً 750غیر قانونی پورشنز نما عمارتیں لیاقت آباد میں گذشتہ 10سالوں میں تعمیر کر دی گئی ہیں۔ یاد رہے کہ ہر غیر قانونی تعمیرات سے لیاقت آباد کے ڈائریکٹرو متعلقہ افراد کو تقریباً 8سے17لاکھ روپے بلڈر کی جانب سے ادا کیئے جاتے ہیں۔علاوہ ازیں B ایریا نزد اسٹوڈنٹ گراﺅنڈ، پلاٹ نمبر 3A/32،پلاٹ نمبر 2/35اور پلاٹ نمبر 4/36پر 7منزلہ عمارتیں تکمیل کے مراحل پر ہیں. یاد رہے کہ ایس بی سی اے کا برطرف افسر ضیاء کالا اور اسکا ہمزلف کامران مرزا ڈائریکٹر لیاقت آباد کے لیئے فرنٹ مین کے طور پر کام کر رہے ہیں.

اپنا تبصرہ بھیجیں