کراچی ٹریفک پولیس کی جانب سے میڈیکل سینٹرز جانے والے مریضوں کو تنگ کرنے کا سلسلہ شدّت سے جاری‎، خصوصاًانکل سریا سگنل پر تعینات ٹریفک اہلکاروں کی جانب سے مریضوں سے بد سلوکیاں عروج پر

کراچی ٹریفک پولیس کی جانب سے میڈیکل سینٹرز جانے والے مریضوں کو تنگ کرنے کا سلسلہ شدّت سے جاری‎، خصوصاًانکل سریا سگنل پر تعینات ٹریفک اہلکاروں کی جانب سے مریضوں سے بد سلوکیاں عروج پر

جمعرات 18فروری2021
123karachi.com
دورانیہ مطالعہ: 02منٹ
کراچی ، فریئر روڈ:کراچی ٹریفک پولیس نے انکل سریا اسپتال، اپوا کمپلیکس بلڈنگ اور اس سے ملحقہ دیگر میڈیکل سینٹرز پر علاج معالجہ یا لیب ٹیسٹ وغیرہ کے لیئے آنے والے شہریوں اور مریضوں کو تنگ کرنے کا سلسلہ شدت سے جاری رکھا ہوا ہے۔ تفصیلات کے مطابق انکل سریا سگنل نزد GMTسینٹر پر آنے والے شہری جب رکشہ یا کسی سواری میں علاج معالجے کے لیئے متعلقہ میڈیکل سینٹر کے قریب رکشہ یا سواری کو روکتے ہیں تو وہاں پر تعینات ٹریفک اہلکار انتہائی بدتمیزی اور درشت انداز میں شہریوں اور مریضوں کی ہتک کرتے ہیں۔اور جو شہری یا مریض رکشے میں بیٹھے ہوتے ہیں ان کو تنگ کر کے کہا جاتا ہے کہ رکشہ یہاں سے فوراً ہٹالو۔واضح رہے کہ مذکورہ میڈیکل سینٹرز پر آنے والے بہت سے ایسے مریض ہوتے ہیں جو کہ سواری کے بنا پیدل چل کر اسپتال یا متعلقہ میڈیکل سینٹرز نہیں جا سکتے، مگر ٹریفک اہلکار مریضوں کو مجبور کرتے ہیں کہ وہ سواری سے اتر کر طویل فاصلہ پیدل طے کریں۔ جبکہ مریض جس سواری میں آتے ہیں اس سے عموماً میڈیکل سینٹر میں آمدورفت میں کوئی خلل نہیں پڑتا، اصولاً تو ہونا یہ چاہیے کہ ٹریفک اہلکار، مختلف میڈیکل سینٹروں پر آنے والے شہریوں اور مریضوں کو سہولت فراہم کریں مگر وہ الٹا مریضوں کو ہی تنگ کرتے نظر آتے ہیں۔
علاوہ ازیں انکل سریا اسپتال اور GMTسگنل پر خان کوچ، ماشاءاللہ کوچ، اور دیگر منی بسیں اور کوچیں وغیرہ انتہائی تیز رفتاری اور خطرناک انداز سے ڈرائیو کرتی نظر آتی ہیں ،جن کو ٹریفک اہلکار کچھ بھی نہیں کہتے۔ واضح رہے کہ مذکورہ سگنل پر پہلے SOامجد ہوا کرتے تھے جن کو اس قسم کی شکایتوں پر ہٹا کر نئے SO لیاقت کو تعینات کیا گیا ہے مگر اس کے باوجود ٹریفک اہلکارروں نے شہریوں اور مریضوں کو تنگ کرنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے۔‎

اپنا تبصرہ بھیجیں